یادوں کے جگنو – ام شاہد

شاہد کی یاد میں
✍️یادوں کے جگنو ایسے ہوتے ہیں جو کھلی ہتھیلیوں سے نہیں اڑتے
کچھ تتلیوں کے رنگ انگلیوں کو بار بار جھٹکنے سے بھی نہیں مٹتے…..
کچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں
جو داستاں ہوتے. ہوئے امر ہو جاتے ہیــــــــں
جو منوں مٹی کے نیچے ہوتے
ہوئے بھی زندہ رہتے ہیں
ان میں ایک میرا شاہد ابوہریرہ جو امر ہو گیا اک زندہ کردار کی طرح جو آج بھی زندہ ہیں کل بھی زندہ رہے گا یہاں بھی زندہ ہیں اور اللّٰــــــہ کے ہاں بھی زندہ ہیں رزق کھاتا ہیں جہاں چاہتا ھے آتا جاتا جہاں چاہتا ھیــــں اور اپنے رب سے باتیں کرتا ہیــــــــں
ان شاء اللہ……..
بتا رہیں ھے صاف صاف کرن نور کی……………
کہ اس مقام پر شہید کا
مزار ھے………………
میں جاتیں ہوں اب وہ لوٹ
کر نہ آئے گا…………….
مگر میں دل کا کیا کروں اسی کا انتظار ھے………….

از قلم ام شاہد

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

دعا – ام شاہد

دعا ✍️از قلم ام شاہد تجھ سے اے مالک تیری یہ نالائق غلام………….. چند چیزیں …

خودی کو کر بلند اتنا – ام شاہد

خودی کو کر بلند اتنا ✍️از قلم ام شاہد اپنے اخلاق و کردار سے دوسروں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے