16.2 C
London
بدھ, اگست 4, 2021

عورت، اسلام کی آغوش محبت میں _ جویریہ بتول

- Advertisement -spot_imgspot_img
- Advertisement -spot_imgspot_img

مسلمان عورت…!!!
(✍🏻:جویریہ بتول)

اے مسلمان عورت تو پہچان لے مقام اپنا…
وقار اپنا……کردار اپنا……انعام اپنا…

جب تیرا وجود بھی زمیں پر باعثِ آزار تھا…
انداز بے رحم تھا بہت،نہ حقوق کا معیار تھا…
پیدائش پر بیٹی کے باپ سوچتا کئی بار تھا…
اسلام نے جو آ کر دیا، سمجھ وہ اِکرام اپنا…

بیٹی ہو بہن ہو تم بیوی اور پھر اک ماں…
جس صورت میں بھی ہو تم مہکاؤ یہ گلستاں…
تمہیں عطا رب نے کیا ہے حقوق کا اِک آسماں…
بہت خاص ہو اب تم ،وجود سمجھو نہ عام اپنا…

مومنہ ہو تم مسلمہ ہو، قانتہ ہو تم تائبہ ہو…
عابدہ ہو تم ساجدہ ہو،راکعہ ہو تم خاشعہ ہو…
تاریخ کے سینے میں سیرتِ خدیجہ و آسیہ ہو…
کیوں بھولی ہو صفات یہ،بھولا ہے کیوں نام اپنا…؟

عمارہ کے نقشِ پر میدانِ جنگ میں صف آراء…
صفیہ کی ہو تم وارث رکھ سکتی ہو دل بڑا…
ماں عائشہ کی سیرت بنائے تمہیں علم کا دریا…
راستوں کو پہچان لو اب، گر کرنا ہے کام اپنا…

جنسِ بازار ہو نہ تہذیبِ مغرب کا معیار تم…
جن راہوں کی ہیں وہ راہی،ہو گی یقینًا بیزار تم…
حقوق کے نام پر استحصال کے وار پر رہو بیدار تم…
آشیاں سے کرکے بغاوت،کھو نہ دو زادِ تمام اپنا…

حیا کی تم پر چادر ہے،غیرت کا ملا ہے غازہ بھی…
ہر دَور میں ہے کردار تمہارا،رہے یہ عزمِ تازہ بھی…
تمہاری حفاظت کا ہے مکان ،نکلنے کا دوازہ بھی…
حصارِ عظمت گنوا نہ دینا،حصار رکھنا دوام اپنا…!

- Advertisement -spot_imgspot_img
محمد نعیم شہزادhttps://myblogs.pk
محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔
Latest news
- Advertisement -spot_img
Related news
- Advertisement -spot_img

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

Translate »