16.2 C
London
بدھ, اگست 4, 2021

ایک اور گھس بیٹھ تیار ہے۔۔۔فہیم شاکر

- Advertisement -spot_imgspot_img
- Advertisement -spot_imgspot_img

ایک اور گھس بیٹھ ہے تیار

تحریر محمد فہیم شاکر


*سپوتنک نیوز کے مطابق ہندوستانی سینا پاکستان میں گھس بیٹھ کرنے کو بالکل تیار ہے*
یہ خبر ایک ایسے وقت میں آئی ہے جب مدھیہ پردیش اور اتر پردیش سے بھارتی افواج کی بھاری ہتھیاروں کے ساتھ پنجاب اور راجھستان بارڈر کی طرف روانگی کی اطلاع ہے، مدھیہ پردیش اور اترپردیش میں مقیم بھارتی فارمیشنز بھاری ہتھیاروں کے ساتھ پنجاب کے ابوہار سیکٹر اور راجھستان کے بیکانیر اور بارامیر سیکٹر کے طرف روانہ دیکھی گئی ہیں
دوسری طرف اگر بات کی جائے پاکستان کی تو پاک فوج اور اس کا ہر شعبہ گذشتہ ایک ماہ سے بالکل الرٹ پوزیشن میں ہے
مزے کی بات یہ ہے کہ ہندوستان اس ملک سے جنگ کرنے چلا ہے جس کے زیر تربیت کیڈٹس بھی مختلف پوزیشنز پر گذشتہ ایک ماہ سے موجود ہیں، سپاہیوں اور آفیسرز کی تو بات ہی الگ ہے
چند دن قبل انڈین آرمی چیف کا بیان بھی میڈیا میں گردش میں رہا کہ ہم پاکستان میں سرجیکل سٹرائک کریں گے
یہ وہی آرمی چیف ہے نا جو تھنہ منڈی میں پاک فضائیہ کے نشانے پر تھا وہ تو پاک فضائیہ کا شکریہ کہ انہوں نے اس سورمے کی جان بخشی کردی، حالانکہ ایسا کرنا نہیں چاہیے تھا، کیونکہ آج یہ پھر ہرزہ سرائی کر رہا ہے، لیکن میرا مشورہ ہے کہ ہندوستان اپنا شوق پورا کر دیکھے، ہم اسے مایوس نہیں کریں گے
ایک طرف جہاں ہندوستان نے آئی ایس پی آر نے طاقت کا اندازہ کر لیا ہے وہیں وہ جان چکا ہے کہ *اک تھا ٹائیگر* میں آئی ایس آئی کو بدنام کرنا اور کمزور ترین دکھانا اور چیز ہے لیکن حقیقت میں اس سے ماتھا ٹیکنا موت کو دعوت کے مترادف ہے
کہا یہ بھی جا رہا ہے کہ چوبیس گھنٹے اہم ہیں اس دوران انڈیا کی طرف سے کسی بھی قسم کی حرکت ہو سکتی ہے، لیکن پاک فوج میں یا پاک فوج کی طرف سے ملک میں کسی بھی قسم کی ایمرجنسی نہ ہونے کے سبب عوام بے فکر ہیں اور مسلح افواج پر عوام کا یہی وہ اعتماد ہے جسے توڑنے کے لیے انڈیا سمیت دسیوں ممالک نے اربوں روپے کی سرمایہ کاری کی اور پاکستانی سیاست دانوں کو خریدا، لیکن آج وہ تمام ہاتھ مل رہے ہیں کہ کوئی بھی تدبیر کچھ بھی کارگر نہ ہوئی
صرف یہ چوبیس گھنٹے ہی اہم نہیں بلکہ انڈیا میں آمدہ الیکشن تک ہر لمحہ ہی اہم ہے، ہندوستان انڈیا کی مدد سے پاکستان کے خلاف کسی بھی حد تک جا سکتا ہے، کیونکہ مودی کو نہ تو جنتا کی فکر ہے اور نہ ہی معصوم فوجی یا سپاہیوں کی، اسے خواہ درجنوں فوجی مروانے پڑیں وہ ایسا کرے گا، کس لیے؟ صرف آمدہ الیکشن میں اپنی جیت کے لیے.
عوام ہندوستان کی مرے یا انڈیا کی، نقصان انڈیا کا ہو یا بھارت کا، مودی سرکار کو اس سے کوئی سروکار نہیں
پاکستان اس جنگ کو ہر لحاظ سے ٹالتا آرہا ہے کہ یہ جنگ نہ ہی ہو، اور ابھی نندن کو واپس کرنا بھی جنگ ٹالنے کی ایک کوشش ہی تھی، جسے یار لوگ غلط رنگ دیتے پائے گئے
کیونکہ پاکستان امن کی خاطر ہر وہ قربانی دینے کو ہمیشہ تیار رہا ہے جس سے اس کا قد بلند ہوتا ہو، اور دنیا میں پاکستان کا سر فخر سے اونچا ہو
لیکن نہ تو کبھی دنیا کو فرصت ملی کہ پاکستان کے اس اقدام کو سراہتی اور نہ ہی ہندوستان کو کبھی اس بارے زحمت کرنے کی فرصت ہوئی، بلکہ جام بخشی کے باوجود انڈین آرمی چیف پاکستان ہی کے خلاف ہرزہ سرائی کرتا رہا، تو پھر آجاو، دیر کس بات کی، بقول شیخ رشید ہم نے ایٹم بم عجائب گھر میں سجا کر رکھنے کو نہیں بنایا
اور بقول کاکا مسٹنڈا کہ ہم نے ایٹم بم کو چوڑیاں نہیں پہنا رکھیں
اور بقول شخصے ہم نے ایٹم بم کو مہندی لگا کر نہیں رکھا ہوا، باجوہ صاحب زرا اشارہ تو کریں ہم اٹم بم کو ٹاکی شاکی مار کر تیار کر دیں گے، پھر انڈیا چاہے تو بھارت کی مدد سے ہمارے پھینکے بموں کو کیچ کرے چاہے تو ان کے قطب مینار بنا

لے۔

https://sputniknews.com/amp/asia/201904031073778259-india-another-strike-pakistan/?fbclid=IwAR0dIUeAk65f5BwtVQfOCUU87mKa0yofEXfy8sksE1Sw-HBlNKf721ofOX4&__twitter_impression=true

- Advertisement -spot_imgspot_img
محمد نعیم شہزادhttps://myblogs.pk
محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔
Latest news
- Advertisement -spot_img
Related news
- Advertisement -spot_img

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

Translate »