آزادی اظہار رائے اور مذہبی رواداری – ڈاکٹر ماریہ نقاش

جینے نہیں دیتے اسلام کے غدار
✍🏻 بقلم
ڈاکٹر ماریہ نقاش
موجودہ حالات و واقعات کے پیش نظر اگر کرنٹ سچیوایشن کو ملاحظہ فرمایا جائے۔۔۔تو عوام الناس میں ایک ارتعاش کی لہر دیکھی جا رہی ہے۔۔۔۔کچھ مثبت اور منفی لہروں کے ساتھ پاکستان کے سکون اور چین کے سمندر میں ایک طلاطم برپا ہے۔۔۔جس کے تندو تیز تھپیڑوں پر سلطنت اسلامیہ کے مکیں ، قلع اسلام کے محافظوں کے ایمان ہچکولے کھا رہے ہیں۔۔۔کہیں اہل اسلام کو یورپین یونین سے خارج ہونے کی فکر لاحق ہے ۔۔کہیں مسلمانوں کو فورن کنٹریز کے ساتھ ٹریڈ بند ہونے کا صدمہ لاحق ہے۔۔۔کہیں پاکستانی فاقوں مرنے اور ملکی حالات ڈائون ہونے پر تبصرے کرتے سنائی دے رہے ہیں ۔۔۔
دوسری طرف ۔۔اسی مملکت اسلامی کے مسلمان بھائی سڑکوں پر ناموس رسالت اور حرمت رسول پر کٹتے مرتے دکھائی دے رہے ہیں۔۔۔
قارئین۔۔۔!
مسلمان وہ بھی ہیں۔۔۔اور مسلمان یہ بھی ہیں ۔۔لیکن یہ کیسا فرق ہے دونوں میں۔۔؟؟؟
ایک حرمت رسول پر ہونے والے احتجاجات کے نتیجے میں۔۔۔منفی اقدامات کے تحت وسائل کی کمی کی پریشانی سے مرے جا رہے ہیں۔۔۔
اور ایک اہل ایمان وہ ہیں جو خود اپنی جان ہتھیلیوں پر لئیے عوام الناس اور خاص ، حکومت اعلی اور غیر ملکی حکومتوں کو اپنے غصے کا اظہار کر رہے ہیں۔۔۔
کہ۔۔۔۔ نبی کی بے حرمتی پر ہم خاموش نہیں رہیں گے۔۔۔کٹ جائیں گے،،، مر جائیں گے۔۔۔مگر چپ نہیں بیٹھیں گے۔۔۔اپنے رسول ص کے گستاخوں کو سزا دلوا کر رہیں گے۔۔۔ غیر مسلم ممالک میں اس بے حرمتی کو روک کر رہیں گے۔۔۔
وہ اپنی زندگیوں کو دائو پر لگائے بیٹھے ہیں۔۔۔ ایسی زندگی جسکی آپ،،،، میں،،،، ہر شخص خواہش کرتا ہے ۔۔۔
کبھی اپنے لئیے،،،، تو کبھی اپنی بوڑھی ماں کیلئیے۔۔۔
کبھی جھکی کمر ٹوٹی لاٹھی اور بے ساکھی کا سہارا لئیے بیمار باپ کی خاطر۔۔۔
کبھی چھوٹے سکول و کالج جاتے بھائی کیلئیے ۔۔۔۔۔
تو کبھی بن بیاہی بہن کیلئیے۔۔۔۔
کبھی اپنی کم عمر اولاد کیلئیے۔۔۔ کے جس نے بڑے ہو کر باپ کی چھائوں میں دنیا اور زندگی کی ہر مشکل کا مقابلہ کرنا ہے ۔۔۔۔

کبھی شریک حیات کیلئیے کہ جسکا ہر اگلا قدم اپنے ہم سفر کے پیروں کے نشان پر اٹھتا ہے ۔۔
جو خاردار کانٹوں بھری دنیا میں اپنا آنچل بچھا کر بچوں کو اسکی چبھن سے محفوظ رکھے ہوئے ہے۔۔۔اور آنچل کو چھلنی ہونے سے بچانے والا وہ ایک اکیلا خود ہے۔۔۔
____اگر سچا ہے نبی ص کے عشق میں اے بنی آدم____
____نگاہ عشق پیدا کر، حسن ظرف پیدا کر____
اس بندہ خدا کی نبی ص سے محبت ،ایمان اور نیکی کی کیا کیفیت ہو گی ۔۔۔۔
کہ۔۔۔وہ ہے رشتے سے بالا تر صرف ایک ذات کی محبت میں سر پر کفن باندھے نکل کھڑا ہوا۔۔۔
_____ اس قوم کو شمشیر کی حاجت نہیں رہتی____
____ہو جس کے جوانوں کی خودی صورت فولاد____
ان اسلام کے پیروکاروں نے آواز بلند کی درست کیا ۔۔۔۔۔
سب کو بتلایا کے ہم اپنے آخری نبی ص کی بے حرمتی برداشت نہیں کریں گے۔۔۔۔درست کیا۔۔۔
غیر مسلم قوتوں کو منہ توڑ جواب دیا ۔۔۔۔درست کیا۔۔۔
عالمی سطح پر اعلی اقتدار والوں کو چیخنے اور سوچنے پر مجبور کیا ۔۔۔درست کیا۔۔۔
انکے ختم نبوت پر حملے کا جواب اینٹ پتھر سے دیا ۔۔۔درست کیا ۔۔۔۔
ہاں مگر طریقہ درست نہیں تھا۔۔۔
لیکن۔۔۔۔!!!! قارئین احتجاج کا کوئی دوسرا طریقہ دنیا کی کسی کتاب میں درج ہے تو بتائیے۔۔۔۔بات کیجئیے۔۔۔۔ مزاحمت کیجئیے۔۔۔۔
احتجاج اسی طرح ہوتا ہے۔۔۔اسی طرح کیا جاتا ہے ۔۔۔اور رہتی دنیا تک اسی طرح کیا جاتا رہے گا۔۔۔۔
دنیا کے کسی ملک میں احتجاج کا کوئی الگ طریقہ اپنایا جاتا ہے تو ہمیں بتلائیں۔۔۔۔یورپین یونین ہماری اصلاح کرے۔۔۔
مگر اس احتجاج کو منفی بنا کر پیش کرنے کا کیا مقصد۔۔۔؟؟؟ غیر مسلم قوتیں اس کو غلط اینگل سے لوگوں کو دکھانے غلط ہتھکنڈے استعمال کر کے ملک پر غلط فیصلے صادر کرنے کا کیا مقصد۔۔ ؟؟؟ سوال تو یہ ہے کہ۔۔۔۔ اگر غلط قرار دینا ہی تھا،،،، تو میرا جسم میری مرضی کے تحت جو سڑکوں پر ہوا تھا وہ بھی احتجاج ہی تھا اسے غلط قرار کیوں نہیں دیا؟؟؟؟
لیکن جب حرمت رسول پر احتجاج ہوا تو ہی اینٹی پاکستان ، غیر مسلم لوگوں کو یہ دہشت گردی کا بڑھاوا لگا۔۔۔؟؟؟ تب ہی عالمی سطح پر پاکستانیوں کے ساتھ ٹجارت کو بند کرنے کا فیصلہ سنایا گیا۔۔۔؟؟؟
کیوں؟؟؟ آخر کیوں؟؟؟؟
قارئین یہاں ہم سب کو ہوش کے ناخن لینے کی ضرورت ہے ۔۔۔
ان ظالموں کی سازشوں کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔۔
یہ چاہتے ہیں کہ آئندہ مسلم قوم کبھی اپنے نبی ص کی حرمت پر بے قابو نہ ہوں ۔۔۔۔۔ تجارت بند کر کے انہیں فکر و بے چینی میں مبتلا کر دیا جائے ۔۔۔
یورپی یونین سے خارج کرنے کی دھمکی دے کر انہیں ڈپریشن کا شکار کیا جائے ۔۔۔تا کہ یہ انہی معاملات میں الجھے رہیں۔۔۔اور انہیں اپنے دینی معاملات اور حرمت رسول کو پروٹیکٹ کرنے کا خیال تک نہ آئے۔۔۔
ملکی، ذاتی ، نجی اور معاشرتی معاملات میں یہ اس قدر کھو جائیں کہ باقی ہر طرف سے انکا دھیان ہٹ جائے۔۔۔
_____کفار سیاست میں وطن اور ہی کچھ ہے____
____ارشاد نبوت میں وطن اور ہی کچھ ہے____
مگر قارئین اگر۔۔۔۔ مثبت سوچ کے ساتھ تصویر کا دوسرا رخ دیکھا جائے تو۔۔۔یہی وقت ہے جب ہم مسلمان اور تمام پاکستانی ملکر بحیثیت خود مختار قوم کھڑے ہو سکتے ہیں۔۔۔۔لمیٹیڈ فیسیلیٹیز میں سروائیو کرنا سیکھ سکتے ہیں ۔۔۔لیکن اپنے عقیدے اور ختم نبوت کے ساتھ سمجھوتہ نہیں کر سکتے۔۔۔۔
شاید اللہ تعالی نے ہمارے لئیے ایک راستہ کھولا ہے۔۔۔غیر مسلموں سے بائیگلکاٹ کی صورت میں ۔۔۔اندھیرے میں ایک کرن دکھائی دی ہے ۔۔۔۔
انشا اللہ اب پاکستان بحیثیت خود مختار قوم دنیا کے نقشے پر ابھرے گا ۔۔۔
دوسری طرف کچھ پاکستانیوں کو جو فکر لاحق ہے کہ۔۔۔ٹریڈ بند ہو جانے پر پاکستانیوں کی معیشت تباہ ہو جائے گی۔۔۔۔ تو ان نام کے مسلمانوں کیلئیے ایران کی مثال کافی ہے ۔۔۔ ایرانیوں کے ساتھ غیر ملکی قوتوں کے بائیکاٹ کے باوجود ایران سروائیو کر رہا ہے۔۔۔۔اور پہلے سے بہتر کر رہا ہے۔۔۔۔
____اقبال تیرے دیس کا کیا حال سنائوں ___
____بے باقی اور حق گوئی سے گھبراتا ہے مومن____
بات کو مزید واضح اور پر زور کئیے دیتی ہوں ایک نہایت اوتھینٹک مثال کے ساتھ۔۔۔۔
اسلام کے شروعات کے دنوں میں ۔۔۔۔جب مسلمانوں کی تعداد بہت کم تھی۔۔۔۔ مسلمانوں پر کفار مکہ نے تجارت کے دروازے بند کر دئیے تھے۔۔۔تب نہ صرف مسلمانوں نے سروائیو کیا۔۔۔بلکہ اللہ تعالی نے انکی ایسی مدد کی کہ۔۔۔ کم سہولیات میں بھی مسلمانوں نے اسلام کی ایک مثال قائم کی،،غلبہ بھی پایا۔۔۔اور اہل اسلام کی تعداد میں اضافہ بھی ہوتا رہا ۔۔۔۔
تو قارئین کرام!!! یہ بات واضح ہے کہ یہ سب صرف اور صرف مسلمانوں کو ڈی مورالائیز کرنے کی ایک چال ہے۔۔۔جسے ہم سب ملکر ناکام کریں گے۔۔۔
بحیثیت مسلمان اور پاکستانی مجھ سمیت ہر پاکستانی اپنا مثبت کردار ادا کرے گا ۔۔۔ تا کہ زیادہ سے زیادہ پاکستانیوں کو اس سازش (ڈی مورل) ہونے سے بچایا جا سکے۔۔۔
میں اپنا کردار ادا کرتے ہوئے یہ تحریر آپکے لئیے لکھ رہی ہوں ۔ ۔۔ اب آپ پر منحصر ہے کہ اسے پڑھ کر اگنور کریں ۔۔یا زیادہ سے زیادہ لوگوں کو اوئیرنیس دیں۔۔۔۔
_____جذبات کو تیرے جو خاطر میں نہ لائے____
____اس شخص پہ الفاظ کو ضائع نہیں کرتے____
آخر میں ، میں اپنے پروردگار سے دعا گو ہوں کہ ۔۔۔۔یارب۔۔۔!!!
ایسے لوگ جو ہم پاکستانیوں کو ہم مسلمانوں کو اسلامی طریقے سے جینے نہیں دیتے ۔۔۔ہمارے عقیدے پر وار کرتے ہیں ۔۔ہمارے ایمان کو کھوکھلا کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔۔۔ ہمارے نبی ص کی عزت پر حملہ کر کے ہماری غیرت کو للکارتے ہیں ۔۔ایسے اسلام دشمن لوگوں کو ہدایت دے۔۔۔اور اے پروردگار۔۔۔!!! اگر یہ ہدایت کے طلبگار اور مستحق نہیں ہیں۔۔۔تو یا اللہ انہیں تباہ و برباد کر ۔۔انہیں عبرت کا نشاں بنا کہ آئندہ کبھی کوئی ہمارے دین اور ہمارے پیارے نبی کی شان میں گستاخی کی جرت نہ کر سکے ۔۔۔
آمین
طالب دعا
بنت نقاش

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

غزوہ بدر، الرحیق المختوم سے اختصار – عمران محمدی

*غزوہ بدر* (اختصار من "الرحیق المختوم”) جمع و ترتیب *عمران محمدی* عفا اللہ عنہ *============* …

مومنین اور رمضان المبارک – حافظ امیر حمزہ سانگلوی

مومنین اور رمضان المبارک تحریر:حافظ امیر حمزہ سانگلوی ماہ صیام کی آمد آمد ہے۔مومن مسلمان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Translate »